| بلاگز | اگلا بلاگ >>

ہوائی سفر اور بھگوان پر بھروسہ

نعیمہ احمد مہجور | 2006-10-18 ،17:24

سفر کے دوران وقت بچانے کی فکر میں میرا سب سے زیادہ وقت ہوائی اڈوں پر ضائع ہوا۔ ہوائی سفر عام تو ہوا ہے مگر اڑے کم۔ عملا نابود اور وقت کا کوئی احساس نہیں۔
blo_nayeema_plane_150.jpg

طیاروں کو اترنے اور اڑان بھرنے کے لیےگھنٹوں انتظار کرنا پڑتا ہے۔
دلی کے ائرپورٹ پر گھنٹوں انتظار کرنے کے بعد جب میرے صبر کا پیمانہ لبریز ہوا تو میں نے ائرلاینز کے ایک کارکن سے پوچھنے کی جرآت کی ’جہاز نکلے گا یا نہیں؟‘ ’ضرور نکلے گا۔ بھگوان پر بھروسہ کریں۔ وہ ساری دنیا چلاتا ہے کیا ایک جہاز نہیں چلائے گا؟‘ وہ مسکرا کر کہنے لگا۔
میں خود بھی مسکرائی کیونکہ اب بھگوان پر بھروسہ کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا۔

تبصرےتبصرہ کریں

  • 1. 15:29 2006-10-28 ,shahidaakram :

    نعيمہ جی جب سب کچھ بھگوان کے سپرد ہوگيا تو پھر ڈر کس بات کا رہا۔ آپ کو بھی شکر گزار ہونا چاہيئے بھگوان کا اور اُُ س کے بعد اس بات پر کے جو پوری دُنيا چلا سکتا ہے اک جہاز نہيں چلائے گا کيا؟ بات اعتبار کی ہوا کرتی ہے اور جب وہ اللہ، بھگوان، يا کوئی بھی ايسی ذات ہو جو ہمارے لئے اتنے يقين کا باعث ہو تو ايسا ہی ہوا کرتا ہے۔ بات ہے اعتبار اور يقين کے مضبوط ہونے کی۔

BBC navigation

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔