نائیجیریا: فرانسیسی یرغمالیوں کی ویڈیو جاری

آخری وقت اشاعت:  منگل 26 فروری 2013 ,‭ 07:01 GMT 12:01 PST

اس ویڈیو میں ایک مسلح شخص کو دکھایا گیا ہے جو دو مردوں، ایک خاتون اور چار بچوں کے سامنے ایک تحریری بیان پڑھ کر سنا رہا ہے

سماجی رابطے کی ویب سائٹ یو ٹیوب پر ایک ویڈیو جاری کی گئی ہے جس میں افریقی ملک کیمرون سے اغوا ہونے والے ایک فرانسیسی خاندان کے سات افراد کو دکھایا گیا ہے جن میں چار بچے بھی شامل ہیں۔

اس ویڈیو میں ایک مسلح شخص کو دکھایا گیا ہے جو دو مردوں، ایک خاتون اور چار بچوں کے سامنے ایک تحریری بیان پڑھ کر سنا رہا ہے۔

اس بیان میں اس شخص کا دعویٰ ہے کہ اس کا تعلق نائجیریا کے اسلامی شدت پسند گروہ بوکو حرام سے ہے اور اس نے کیمرون اور نائجیریا میں قید افرار کی رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خاندان کو موٹر سائیکل پر سوار مسلح افراد نے گزشتہ منگل کو کیمرون سے اغوا کیا تھا۔

اس اغوا کے بعد فرانسیسی حکومت نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ اس خاندان کو جس میں چار بچے جن کی عمریں پانچ، آٹھ، دس اور بارہ ہیں کو بوکو حرام نے اغوا کر لیا ہو گا اور انہیں نائیجیریا لے جایا گا ہو گا۔

اس خاندان کے سربراہ کیمرون کے دارالحکومت یوئنڈے میں ایک فرانسیسی گیس کمپنی سوئز میں کام کرتے ہیں اور یہ خاندان وازا نیشنل پارک کی سیر سے واپس آ رہے تھے جب انہیں اغوا کر لیا گیا۔

فرانسیسی وزیر خارجہ لوراں فیبیوس نے ایک بیان میں کہا کہ ’یہ تصاویر ظلم اور بربریت ظاہر کرتی ہیں جس کی کوئی حد نہیں ہے‘۔

اس ویڈیو میں ایک مرد یرغمالی کہتا ہے کہ اس خاندان کو ایک گروہ جس کا نام وہ جماعۃ اہلسنۃ لدعوہ ولجہاد بتاتے ہیں نے اغوا کیا ہے جو بوکو حرام کا عربی نام ہے۔

اس خاندان کو کیمرون کے وازا نیشنل پارک کی سیر سے واپسی پر اس جگہ سے اغوا کیا گیا تھا

ایک اغوا کار نے ویڈیو میں فرانس کو خبردار کیا کہ اس نے اسلام کے خلاف جنگ کا آغاز کیا ہے جس کے نتائج ہوں گے۔

اس خاندان کے ایک قریبی رشتہ دار نے ان افراد کی شناخت کے بارے میں خبر رساں ادارے اے ایف پی کو تصدیق کی۔

فرانسیسی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ وہ ابھی اس ویڈیو کی اصلیت کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے ایک فرانسیسی وزیر نے غلطی سے اعلان کیا تھا کہ اس خاندان کا پتہ چل گیا ہے۔

فرانس نے اپنے شہریوں کو شمالی کیمرون سے جلد از جلد نکل جانے کا کہا ہے اور انہیں نائجیریا کی سرحد کے قریبی علاقوں میں جانے سے بالکل منع کر دیا ہے۔

بوکو حرام گروہ اس سے قبل کئی قسم کے شدت پسندی کے واقعات میں ملوث رہا ہے جس میں گرجا گھروں کا جلایا جانا بھی شامل ہے۔

اسی خطے میں ایک اور شدت پسند گروہ انصارو بھی سرگرم ہے جس نے گزشتہ ہفتے سات غیر ملکی کارکنوں کو نائیجیریا سے اغوا کیا تھا۔

ان یرغمال بنائے گئے افراد کا تعلق اٹلی، برطانیہ، یونان اور لبنان سے تھا اور انہیں ایک تعمیراتی منصوبے پر کام کرتے ہوئے اغوا کیا گیا تھا۔

انصارو کا کہنا کہ اس کے پاس ایک فرانسیسی شہری فرانسس کولمپ بھی جسے انہوں نے نائیجیریا کے شمالی ریاست کاٹسینا سے اغوا کیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔