برما میں زلزلہ، بارہ ہلاک، متعدد زخمی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 11 نومبر 2012 ,‭ 09:00 GMT 14:00 PST
زلزلے کی ایک فائل فوٹو

زلزلے سے ہونے والی ہلاکتوں کا ابھی صحیح اندازہ لگانا مشکل ہے

برما میں حکام کا کہنا ہے کہ ملک کے مرکزی علاقے میں شدید زلزلہ آنے سے بارہ افراد ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوئے ہیں۔

حکام کا مزید کہنا ہے ہلاک ہونے والوں کی صحیح تعداد بتانا ابھی مشکل ہے۔

امریکی جیولوجیکل سروے کی رپورٹ کے مطابق ریکٹر سکیل پر چھ اعشاریہ آٹھ کا زلزلہ اتوار کی صبح برما کے دوسرے سب بڑے شہر منڈیلے میں آیا۔

امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق یہ زلزلہ اتوار کی صبح مقامی وقت کے مطابق سات بج کر بیالیس منٹ پر آیا ہے۔

زلزلہ کا اثر بہت زیادہ گہرائی تک نہیں تھا اور اس کی گہرائی دس کلو میٹر تک ہی تھی۔ تاہم اس میں ہلاکتوں کی تعداد اور بڑھ سکتی ہے۔

زلزلے کا مرکز منڈیلے شہر تھا لیکن اس کے آس پاس کے شہروں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ برما کی مقامی میڈیا کے مطابق منڈیلے کے قریبی شہر شیوبو میں ایک زیر تعمیر پل گرگیا ہے۔

دارلحکومت نیپداؤ میں ایک نامعلوم اہلکار نے آج صبح فرانسیسی خبررساں ایجنسی کو بتایا کہ ابھی تک صرف دو افراد کی ہلاکت کی خبر ہے جبکہ تین افراد زخمی ہوئے اور پانچ افراد لاپتہ ہیں۔

شیوبو میں ایک پولیس اہلکار نے بتایا ہے کہ شہر میں زیر تعمیر پل گرنے سے وہاں کام کرنے والے پانچ مزدور لا پتہ ہو گئے۔

ایک پولیس اہلکار نے خبر رساں ایجنسی روئٹرز کو بتایا ہے کہ شیوبو کے قریبی شہر کایوک ماینگ میں ایک گھر کی چھت گرنے سے ایک خاتون ہلاک ہوگئی اور دس افراد زخمی ہوگئے۔

شیوبو کے ایک باون سالہ رہاشی سو سو نے خبر رساں ایجنسی اسوسیٹیڈ پریس کو بتایا ہے ’میں نے اپنی پوری زندگی میں اس سے برا زلزلہ نہیں دیکھا۔‘

زلزلے اتنا تیز تھا کہ لوگ اپنے گھروں سے باہر نکل پڑے اور ہر طرف افراتفری پھیل گئی۔

زلزلے کا اثر قریبی ملک تھائی لینڈ میں بھی محسوس کیاگیا۔ زلزنے کے بعد دو ’آفٹرشاکس‘ یعنی زبردست جھٹکے بھی محسوس کیے گئے۔

امریکی جیولوجیکل سروے نے ’یلوو‘ الرٹ جاری کیا ہے اور کہا ہے کہ زلزلے سے ’تباہی‘ ہوسکتی ہے۔

واضح رہے کہ برما میں زلزلے عام ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔