BBC navigation

چنئی: پہلے ایک روزہ میچ میں پاکستان کی فتح

آخری وقت اشاعت:  اتوار 30 دسمبر 2012 ,‭ 12:41 GMT 17:41 PST

ناصر جمشید نے اپنے ایک روزہ کیریئر کی دوسری سنچری مکمل کی

پاکستان نے بھاررت کو پہلے ایک روزہ میچ میں چھ وکٹوں سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز میں ایک صفر کی برتری حاصل کر لی ہے۔

اتوار کو چنئی میں کھیلے جانے والے میچ میں بھارت نے پاکستان کو فتح کے لیے 228 رنز کا ہدف دیا جسے پاکستان نے ناصر جمشید کی ذمہ دارانہ بلے بازی کی بدولت چار وکٹ کے نقصان پر حاصل کر لیا۔

کلِک تفصیلی سکور کارڈ

ناصر جمشید نے ناقابلِ شکست سنچری بنائی اور ایک سو ایک رن بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔ یہ ایک روزہ کرکٹ میں ان کی دوسری سنچری تھی۔ انہوں نے اپنے کیریئر کی دونوں سنچریاں بھارت کے خلاف ہی بنائی ہیں۔

ناصر کے علاوہ یونس خان نے اٹھاون اور شعیب ملک نے چونتیس رنز کی اہم اننگز کھیلیں۔

شعیب ملک دورۂ بھارت کے دوران دوسری مرتبہ خوش قسمت رہے جب بنگلور ٹی ٹوئنٹی کے بعد اس میچ میں دوبارہ وہ نو بال پر آؤٹ ہوئے جس پر امپائر نے انہیں واپس بلا لیا۔

دو سو اٹھائیس رنز کے ہدف کے تعاقب میں پاکستان کو پہلی گیند پر ہی اس وقت نقصان اٹھانا پڑا جب اپنا پہلا ون ڈے کھیلنے والے بھوونیشور کمار نے اننگز کی پہلی ہی گیند پر محمد حفیظ کو کلین بولڈ کر دیا۔

وہ ایک روزہ کرکٹ کی تاریخ میں کیریئر کی پہلی گیند پر وکٹ لینے والے سترہویں بالر ہیں۔ انہوں نے ہی اظہر علی کو اکیس کے مجموعی سکور پر آؤٹ کر کے بھارت کو دوسری کامیابی دلوائی۔

پاکستان کی تیسری وکٹ ایک سو تینتیس کے سکور پر اس وقت گری جب یونس خان کو اشوک ڈِنڈا نے کیچ کروایا۔

سات نمبر کا کمال

  • دھونی نے سات نمبر کی شرٹ پہنے ہوئے
  • ساتویں نمبر پر بیٹنگ کرنے آئے
  • سات ہزار رن مکمل کیے
  • سات ہزار مکمل کرنے والے ساتویں بھارتی کھلاڑی
  • سات چوکے مارے
  • سات جولائی کو پیدا ہوئے

انہوں نے نہ صرف نصف سنچری بنائی بلکہ ناصر جمشید کے ساتھ مل کر ٹیم کو مشکلات سے نکالا۔ان دونوں کے درمیان تیسری وکٹ کے لیے ایک سو بارہ رنز کی شراکت ہوئی۔

مصباح الحق آؤٹ ہونے والے چوتھے بلے باز تھے جنہیں ایشانت شرما نے بولڈ کیا۔

اس سے قبل پاکستان کی جانب سے پہلے کھیلنے کی دعوت ملنے کے بعد بھارت نے مقررہ پچاس اوورز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 227 رنز بنائے۔

بھارت کی پانچ کھلاڑی صرف انتیس کے مجموعی سکور پر آؤٹ ہوگئے تھے لیکن کپتان مہندر دھونی نے ٹیم کی پوزیشن مستحکم کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔

انہوں نے ایک سو پچیس گیندوں میں 113 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔ ان کا ساتھ روی چندرن ایشون نے دیا جنہوں نے 39 گیندوں اکتیس رنز بنائے۔ ان دونوں کھلاڑیوں نے ساتویں وکٹ کی شراکت میں 125 رنز بنائے۔

پاکستانی بولرز جنید خان اور محمد عرفان نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کیا۔ بھارتی بیٹسمین ان دونوں بولرز کو نہیں کھیل سکے اور پہلے چار کھلاڑی کلین بولڈ ہوئے۔

دھونی نے قائدانہ اننگز کھیلی اور سنچری بنائی

پاکستان کی جانب سے جنید نے چار اور محمد عرفان اور حفیظ نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

بھارتی ٹیم اپنے ہی ملک میں سنہ 2012 میں پہلا ایک روزہ میچ کھیل رہی ہے۔ رواں سال بھارت نے آسٹریلیا، سری لنکا اور بنگلہ دیش میں ایک روزہ میچ کھیلے ہیں۔

بھارتی ٹیم نے اپنے ملک میں آخری بار ایک روزہ میچ دو سال پہلے نیوزی لینڈ کے خلاف کھیلا تھا۔

پاکستان کا اس سال ایک روزہ میچوں کے حوالے سے اچھا سال نہیں رہا ہے۔ اس نے چھ ایک روزہ میچ جیتے جبکہ دس میں اس کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

دوسری جانب بھارت نے رواس سال نو ایک روزہ میچ جیتے اور چھ ہارے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔