BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Thursday, 07 February, 2008, 12:42 GMT 17:42 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
عمران خان ایک بار پھر سندھ بدر
 

 
 
عمران خان کو تیسری مرتبہ سندھ بدر کیا گیا ہے
سندھ حکومت نے تحریکِ انصاف کے رہنماء عمران خان پر ایک بار پھر سندھ میں داخلے پر پابندی عائد کردی ہے جس پر عمران خان کا کہنا ہے کہ ملک بھر کی طرح سندھ کی بھی حکومت بھی بظاہر نگران ہے مگر درپردہ یہ حکومتیں صدر مشرف اور اُن کے حامیوں کی ہی ہیں۔

صوبائی حکومت کے احکامات کی روشنی میں پولیس نے جمعرات کے روز تحریکِ انصاف کے چیئرمین عمران خان کو کراچی ایئرپورٹ سے باہر آنے سے روک لیا اور اگلی پرواز سے اُنہیں اسلام آباد روانہ کردیا، حکومت نے عمران خان پر سندھ میں داخلے پر دس یوم کے لئے پابندی عائد کی ہے۔

عمران خان جمعرات کے روز چار روزہ سیاسی دورے پر کوئٹہ سے کراچی پہنچے تھے جنھیں اے پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے کراچی اور حیدرآباد میں الیکشن مخالف جلسوں کا انعقاد کرنا تھا۔اس سلسلے میں جمعہ کو حیدرآباد اور اتوار کے روز کراچی میں جلسہ ہونا تھا۔

واضع رہے کہ اے پی ڈی ایم نے موجودہ انتخابات کا بائیکاٹ کررکھا ہے۔

عمران حان نے کراچی ایئرپورٹ سے بذریعہ فون بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں کوئی قانون نہیں ہے صرف ڈکٹیٹر شپ ہے اور جو ڈکٹیٹر کے ساتھ ہے وہ جو چاہے کرے اُسے کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔

عمران خان کا کہنا ہے کہ مجھے صرف اور صرف متحدہ کے قائد الطاف حسین کے خلاف اسکاٹ لینڈ یارڈ میں کیس دائر کرنے کی سزا مل رہی ہے جس میں ہم نے ثابت کیا تھا کہ بارہ مئی کے واقعات میں متحدہ قومی موومنٹ ملوث ہے۔

عمران خان نے اس کیس کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ اسکاٹ لینڈ یارڈ کی ٹیم جولائی 2007 سے کیس کی تفتیش اور گواہوں کے بیانات قلمبند کرنے کی کوششیں کررہی ہے تاہم حکومت نے اُنہیں پاکستان آنے کی اجازت نہیں دی، اُن کا کہنا ہے کہ ہم ہر صورت اس کیس کی پیروی کریں گے اور اس کے لئے ہم گواہوں کو لندن لے جانے کی کوششیں کررہے ہیں۔

عمران خان کا کہنا ہے کہ اس کیس کی مزید تفصیلات ظاہر کر کے گواہوں کی زندگیوں کو خطرے میں نہیں ڈالنا چاہتے۔

تحریکِ انصاف کے رہنماء نے موجودہ عدالتی نظام کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا موجودہ ججز عدلیہ کے نہیں بلکہ صدر مشرف کے جج ہیں جن سے ہم کسی صورت رابطہ نہیں کریں گے، اُن کا کہنا ہے کہ موجودہ عدلیہ غیر آئینی ہے۔

عمران خان پر گزشتہ سات ماہ کے دوران سندھ میں داخلے پر یہ تیسری بار پابندی عائد کی گئی ہے، تاہم جب اس پابندی کی وجہ اور سرکاری موقف معلوم کرنے کی کوشش کی گئی تو سندھ اور کراچی پولیس کے سربراہ کے علاوہ نگران وزیرِ داخلہ اور سیکریٹری داخلہ سمیت کوئی متعلقہ سرکاری افسر دستیاب نہیں ہوسکا۔

 
 
اسی بارے میں
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد