مردان: خودکش دھماکے میں اٹھائیس افراد ہلاک

  • 18 جون 2013

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع مردان میں نماز جنازہ میں خودکش حملے میں ممبر صوبائی اسمبلی سمیت اٹھائیس افراد ہلاک اور اکاسٹھ زخمی ہوئے ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے ممبر صوبائی اسمبلی عمران مہمند بھی اس دھماکے میں ہلاک ہوئے ہیں جبکہ ان کے بھائی شدید زخمی ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل پی ٹی آئی کے ممبر صوبائی اسمبلی کو ہنگو میں ہلاک کیا گیا تھا۔

پولیس افسر ایاز محمود نے بی بی سی کو بتایا کہ شہر سے تقریباً تیس کلومیٹر دور تحصیل شیر گڑہ میں ایک پٹرول پمپ کے مالک عبداللہ کی نماز جنازہ کے قریب خودکش دھماکہ ہوا۔ اس دھماکے کے نتیجے میں اٹھائیس افراد ہلاک اور ساٹھ سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امدادی کارروائیاں جاری ہیں اور لاشوں اور زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔

پولیس اہلکار نے بتایا کہ زخمیوں میں زیادہ تر کی حالت تشویش ناک ہے۔

اس واقعہ کے بعد پولیس کی بھاری نفری علاقے میں پہنچ گئی ہے اور پورے علاقے کو کھیرے میں لے لیا ہے۔

واضح رہے کہ عبداللہ کو گزشتہ روز نامعلوم افراد نے اس وقت فائرنگ کرکے ہلاک کردیا جب وہ شہر سے گھر جارہے تھے۔ پولیس کے مطابق عبداللہ کے ساتھ فائرنگ میں ان کا ڈرائیور بھی ہلاک ہوا تھا۔

اس واقعہ کی ابھی کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔اور نہ ہی حکومت نے کسی پر الزام لگایا ہے۔