سندھ: خسرے کی وبا، سو سے زائد بچے ہلاک

آخری وقت اشاعت:  پير 31 دسمبر 2012 ,‭ 14:29 GMT 19:29 PST

وبا پھیلنے کی وجہ معمول کی ویکسینیشن نہ ہونا بتائی جا رہی ہے

پاکستان کے صوبہ سندھ میں خسرے کی بیماری سے ایک ہفتے کے اندر سو سے زیادہ بچے ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ ویکسینیشن میں غفلت برتنے پر محکمہ صحت کے چار افسران کو معطل کر دیا گیا ہے۔

سندھ کے صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر صغیر احمد نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے ہلاکتوں کی تصدیق کی اور بتایا کہ خسرے کی بیماری سے صوبے کے آٹھ اضلاع متاثر ہوئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ وبا پھیلنے کے بعد سکھر، گھوٹکی، کشمور، جیکب آباد، لاڑکانہ، خیرپور اور قمبر شہداد کوٹ میں ہنگامی بنیادوں پر ویکسینیشن کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

وزیر صحت کے مطابق ’جہاں معمول کی ویکسینیشن نہ ہو اور بچے غذائی قلت کا شکار ہوں وہاں خسرے کی بیماری پھیل سکتی ہے‘۔

صحت کے عالمی ادارے ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کا کہنا ہے کہ اس وقت سندھ میں خسرے کے چھ سو سے زائد مشتبہ کیسز کی اطلاعات ہیں، جن کی کیس ٹو کیس تفتیش کی جارہی ہے۔

ادارے کی ترجمان نے کراچی میں بھی پندرہ ہلاکتوں کی تصدیق کی تاہم صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر صغیر کا کہنا تھا کہ یہ پورے سال کی ہلاکتیں ہوں گی۔

ڈبلیو ایچ او کی ترجمان مریم یونس نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ پاکستان میں اس وقت خسرے کے تمام کیسز صوبہ سندھ میں سامنے آئے ہیں اور ان کا ادارہ اس وقت ویکسینیٹر کی فراہمی اور ویکسین کی خریداری میں مدد فراہم کر رہا ہے۔

ان کے مطابق پاکستان میں خسرے کی ویکسین کی قلت ہوگئی تھی، جس کی وجہ سے معمول کی ویکسینیشن نہیں ہوسکی تھی لیکن اب ہنگامی بنیادوں پر ویکسین فراہم کی جا رہی ہے۔ تاہم صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر صغیر نے اس موقف کو مسترد کیا ہے۔

صوبائی وزیر ڈاکٹر صغیر نے پیر کو سکھر اور لاڑکانہ میں محکمہ صحت کے افسران، شکارپور کے ای ڈی او، صالح پٹ اور لاڑکانہ کے تحصیل صحت افسران کو معطل کردیا ہے۔ ان افراد پر الزام تھا کہ وہ متاثرہ علاقوں میں معمول کی ویکسینیشن کرانے میں ناکام رہے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔