ملالہ کا فون: ’کالج کا نام میرے نام پر نہ رکھا جائے‘

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 20 دسمبر 2012 ,‭ 10:36 GMT 15:36 PST

ملالہ کے نام سے منسوب کالج

برطانیہ کے شہر برمنگھم میں زیر علاج پاکستانی طالبہ ملالہ یوسفزئی نے سوات کے ضلعی حکام کو ٹیلیفون کر کے کہا ہے کہ ملالہ یوسفزئی گرلز کالج کا نام بدل دیا جائے۔

واضح رہے کہ اس سال اکتوبر میں ملالہ یوسف زئی پر سوات میں ہونے والے قاتلانہ حملے کے چند دنوں بعد خیبر پختونخوا کے وزیرِاعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے پشاور میں ایک اجلاس سے خطاب کے دوران سیدوشریف گرلز کالج سوات کا نام تبدیل کر کے ملالہ کے نام سے منسوب کرنے کا اعلان کیا تھا۔

حکومت کے اس اقدام کے خلاف سیدو گرلز کالج کی طالبات نے کالج کے اندر مظاہرے کیے تھے۔ طالبات کا موقف تھا کہ ان کے کالج کا نام ملالہ یوسفزئی رکھنے سے انہیں خطرے میں ڈالا جا رہا ہے۔

سوات کے ڈی سی او کامران رحمٰن نے بی بی سی کو بتایا کہ ملا لہ یوسفزئی نے ان کو ٹیلیفون کرکے سید شریف گرلز کالج کے طالبات کی سکیورٹی کے بارے میں اپنے خدشات اظہار کیا۔

ڈسی سی او نے مزید بتایا کہ ملالہ یوسفزئی نے طالبات کی سکیورٹی کے پیشِ نظر سیدو شریف گرلز کالج کا نام ملالہ یوسفزئی کالج نہ رکھنے کا مشورہ دیا۔انھوں نے مزید بتایا کہ ملالہ یوسفزئی نے کہا کہ طالبات کی سکیورٹی ان کے لیے اہم ہے۔

سوات کے ڈی سی او کامران رحمٰن نے کہا کہ ان کی کوشش ہے کہ باہمی مشاورت اور رضامندی سے سیدو شریف کالج کا نام تبدیل کرکے اسے ملالہ یوسفزئی کے نام سے منسوب کیا جائے۔

کالج کی پرنسپل طلعت قمر نے بی بی سی کو بتایا کہ ان کو کالج کا نام تبدیل کرنے پر کوئی اعتراض نہیں اور انہیں حکومت کی طرف کوئی بھی نام قابل قبول ہے۔

اس سے پہلے طالبات نے ان کے کالج کے نام کی تبدیلی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کلاسوں کا بائیکاٹ اور پتھراؤ کیا تھا۔

طالبات کا کہنا تھا کہ کالج کا نام ملالہ سے منسوب کرنا انہیں قبول نہیں اور اگر حکومت ایسا ہی چاہتی ہے تو ایک نیا کالج قائم کر کے اس کا نام ملالہ یوسفزئی رکھے۔

سیدو شریف کالج کے طالبات نے اپنے احتجاج کے دوران کالج کے اندر ملالہ یوسفزئی کے لگائے گئے پوسٹر بھی اتار دیے تھے۔ طالبات کا موقف تھا کہ کالج کا نام ملالہ کے نام پر رکھنے کی وجہ سے ان کا کالج بھی طالبان کے نشانے پر آ جائے گا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔