BBC navigation

محرم الحرام: شہروں میں سخت سیکورٹی انتظامات

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 16 نومبر 2012 ,‭ 09:28 GMT 14:28 PST

محرم الحرام کے آغاز پر دہشت گردی اور فرقہ وارانہ کشیدگی کے خطرے کے پیش نظر حفاظتی اقدامات سخت کر دیے گئے ہیں

پاکستان میں اسلامی سال کے پہلے مہینے محرم الحرام کے آغاز پر دہشت گردی اور فرقہ وارانہ کشیدگی کے خطرے کے پیش نظر حفاظتی اقدامات سخت کر دیے گئے ہیں جن میں کراچی اور کوئٹہ میں موٹر سائیکل سواری پر پابندی اور موبائل فون سروس کو معطل کرنا شامل ہیں۔

تاہم سندھ ہائی کورٹ نے ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں حکومت کی جانب سے موٹرسائیکل سواری پر پابندی کے خلاف درخواست پر اس پابندی کو منسوخ کر دیا۔

اس سے پہلے اسلام آباد میں ہونے والے اجلاس میں وزیر داخلہ رحمٰن ملک نے کراچی اور کوئٹہ میں صبح چھ بجے سے شام سات بجے کے درمیان موٹر سائیکل سواری پر پابندی لگا دی تھی۔

رحمٰن ملک نے جمعرات کو مختلف اقدامات کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ان کا مقصد محرم الحرام کے دوران حفاظتی انتظامات کو بہتر بنانا ہے۔

جمعے کو سینٹ میں اس معاملے پر وزیر داخلہ کے بیان پر سینیٹر فرحت اللہ بابر نے بحث میں حصہ لیتے ہیں ہوئے کہا کہ کراچی میں سندھ ہائی کورٹ نے بظاہر حکومت کا موقف سنے بغیر موٹر سائیکل سواری پر سے پابندی اٹھا دی ہے۔

انھوں نے مقامی میڈیا پر چلنے والی خبروں کی طرف توجہ مبذول کروائی جن کے مطابق سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے سندھ ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے عشائیے میں اپنے سامنے پیش کی جانے والی درخواست پر یہ حکم معطل کر دیا۔

فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ عدالت کسی بھی حکم کو معطل کر سکتی ہے مگر انصاف کی فراہمی کے لیے لازمی ہے کہ حکومت کے موقف کو سنا جاتا۔

وزارت داخلہ کی جانب سے یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ کراچی میں تمام دکانیں صبح دس بجے سے شام پانچ بجے تک کھلی رہیں گی۔

رحمٰن ملک نے سینٹ کے اجلاس میں بتایا کہ کوئٹہ اور کراچی میں موٹر سائیکل سواری پر پابندی خفیہ اداروں کی اطلاع پر لگائی۔

اجلاس کے بعد پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان کے پاس اعداد و شمار ہیں جن سے ثابت ہوتا ہے کہ موٹر سائیکل دہشت گردی کے لیے زیادہ استعمال ہوتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ دو ہزار گیارہ میں پنجاب میں اٹھائیس، سندھ میں ایک سو تین، خیبر پختونخوا میں اٹھاسی، بلوچستان میں دو سو چار، اسلام آباد میں تین اور فاٹا میں ایک دہشت گردی کے واقعات موٹر سائیکل سواروں کے ذریعے ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ ریاست کو آئین کی دفعہ ایک سو اڑتالیس کے تحت ان حالات میں اقدامات کرنے کا اختیار حاصل ہے۔

کراچی سے بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق رات کو سندھ ہائی کورٹ کے حکم کے بعد موٹر سائیکل سواری پر پابندی پر عمل در آمد نہیں کیا گیا جب کہ موبائل فون صبح سے بند ہیں۔ اسی طرح انھوں نے بتایا کہ صورتحال کے پیش نظر اکثر والدین نے بچوں کو تعلیمی اداروں میں بھجوانے سے اجتناب کیا۔

کوئٹہ سے نامہ نگار کے مطابق موبائل فون سروس بند ہے اور موٹر سائیکل سواری پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ موٹر سائیکل سواری پر پابندی کی خلاف ورزی پر پولیس کی طرف سے شہر کے مختلف علاقوں میں متعدد افراد کو جرمانہ کرنے کی اطلاعات بھی ملی ہیں۔

پشاور میں موٹر سائیکل سواری اور موبائل فون پر پابندی نہیں لگائی گئی البتہ ہمارے نامہ نگار کے مطابق شہر میں سیکیورٹی بہت سخت تھی اور جگہ جگہ پولیس نے ناکے لگا کر راستوں کا نگرانی شروع کی ہوئی ہے۔ کچھ سڑکوں پر خاردار تاریں لگا کر راستے بند کر دیے گئے ہیں۔

پاکستان کے صدر آصف علی زرداری اور وزیر اعظم نے محرم الحرام کے آغاز پر قوم کو نئے اسلامی سال چودہ سو چونتیس ہجری کے شروع ہونے کی مبارکباد دی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔