BBC navigation

’حسین حقانی کی سکیورٹی کے لیے درخواست دیں‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 13 نومبر 2012 ,‭ 07:12 GMT 12:12 PST

پاکستان کی سپریم کورٹ نے متنازع میمو سے متعلق کیس کی سماعت میں سابق سفیر حسین حقانی کی وکیل کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے موکل کی ملک واپس آنے پر سکیورٹی فراہم کرنے کے لیے سیکریٹری داخلہ کو درخواست دیں۔

یہ حکم سپریم کورٹ کی نو رکنی بینچ نے مقدمے کی سماعت کے دوران دیے۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کی نو رکنی بینچ نے متنازع میمو کی سماعت کر رہی ہے۔

یاد رہے کہ امریکی فوجی قیادت کو مبینہ طور پر لکھے گئے متنازع میمو کے منظر عام پر آنے کے بعد امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر حسین حقانی مستعفی ہوگئے تھے جس کے بعد وہ پاکستان میں وزیر اعظم ہاؤس میں قیام پذیر رہے تھے اور پھر امریکہ چلے گئے۔

یہ متنازع میمو گُزشتہ برس ایبٹ آباد میں القاعدہ کے رہنما اُسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد امریکی فوجی قیادت کو لکھا گیا تھا جس میں پاکستانی فوج کو موجودہ جمہوری حکومت کے خلاف کارروائی سے روکنے کے لیے امریکہ فوجی قیادت سے اپنا اثرورسوخ استعمال کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔

عدالت نے سیکریٹری داخلہ کو حکم دیا کہ حسین حقانی کی ملک واپسی پر ان کو سکیورٹی فراہم کرنے کے انتظامات کریں۔

حسین حقانی کی وکیل عاصمہ جہانگیر نے عدالت میں کہا کہ ان کے موکل نہ تو بھاگے ہیں اور نہ ہی ملزم ہیں۔

سپریم کورٹ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ حسین حقانی واپس نہ آئے تو آرڈر جاری کریں گے۔

سپریم کورٹ نے اس مقدمے کی سماعت غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردی ہے۔

یاد رہے کہ پیر کو اس مقدمے کی سماعت کے دوران پاکستان کے اٹارنی جنرل عرفان قادر نے کہا تھا کہ وہ امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر حسین حقانی کی پاکستان میں آنے کی صورت میں اُن کی حفاظت کی ضمانت نہیں دے سکتے۔

دوسری جانب حسین حقانی کی وکیل عاصمہ جہانگیر نے ان تحفظات کا اظہار کیا ہے کہ وطن واپسی کی صورت میں حسین حقانی کو خفیہ ادارے اور کالعدم تنظمیں اُٹھا کر لے جائیں گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔