گجرات میں مودی کی مسلسل تیسری جیت

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 20 دسمبر 2012 ,‭ 05:28 GMT 10:28 PST
نریندر مودی

اس جیت سے مودی کو مرکزی سیاست میں اہم رول مل سکتا ہے

بھارتی ریاست گجرات کی اسمبلی انتحابات کے تقریبا سبھی نتائج آچکے ہیں اور ریاست کے وزیر اعلی اور بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما نریندر مودی مسلسل تیسری بار کامیاب ہوگئے ہیں۔

ایک سو بیاسی رکنی اسمبلی میں انہیں ایک سو پندرہ سے زیادہ سیٹیں ملی ہیں اور اس طرح گجرات میں مسلسل تیسری بار انتخاب جیتنے والے وہ پہلے رہنما ہیں۔

ان کی مخالف جماعت کانگریس پارٹی کو ساٹھ سیٹیں ملی ہیں اور اس طرح گجرات میں اسے پچھلے مسلسل پانچ انتخابات میں ناکامی اٹھانی پڑی ہے۔

اپنی کامیابی کے بعد ریاستی دارالحکومت احمدآباد میں اپنے حامیوں کی ایک ریلی سے خطاب کے دوران نریندر مودی نے کہا کہ یہ جیت سارے بھارتیوں کی جیت ہے۔

اس موقع پر انہوں نے ایک بار پھر میڈیا پر تنقید کی اور کہا بعض لوگوں کو اب بھی ان کی جیت ہضم نہیں ہورہی ہے۔

ان کے خطاب کے دوران بار بار پی ایم پی ایم کے نعرے لگ رہے تھے اور لوگ کہہ رہے تھے کہ اب ان کے وزیراعظم ببنے کا وقت آگیا ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ اس جیت کے بعد بھارتیہ جنتا پارٹی میں وہ سب سے قد اور رہنما بن کر ابھرے ہیں اور اب پارٹی آئندہ عام انتخابات ان کی قیادت میں لڑنے کو تیار ہوگي۔

ریاستی دارالحکومت احمد آباد میں بھی ان کے وزیراعظم بننے سے متعلق طرح طرح کے پوسٹر اور بینر لگائے گئے ہیں۔

دوسری جانب ہماچل پردیش میں کانگریس پارٹی نے جیت حاصل کر لی ہے۔ اس پہاڑی ریاست کی اسمبلی میں اڑسٹھ سیٹیں ہیں جس میں کانگریس کو چھتیس نشستیں ملی ہیں۔

حکمراں جماعت بی جے پی کو شکست ہوئی ہے اور اسے چھبیس سیٹیں حاصل ہوئی ہیں۔

گجرات کے انتخابی نتائج کو پورے ملک میں انتہائی دلچسپی کے ساتھ دیکھا جا رہا ہے۔ درجنوں ٹی چینلوں نے صبح سے ہی گجرات کے نتائج اور ان کے تجزے کے لیے خصوصی نشریات جاری کر رکھی ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔